//عشق و وفا نے کر دیا لاچار کیا کریں
urdu_shairy

عشق و وفا نے کر دیا لاچار کیا کریں

فوزی بٹ

عشق و وفا نے کر دیا لاچار کیا کریں

وہ جان مانگتے ہیں تو انکار کیا کریں

کردارجو ملا وہ نبھایا نہیں گیا

ناکام ہیں جو ہم سے وہ فنکار کیا کریں

بستی پرانی ڈھا کے بناتے ہیں گھر نئے

رستے میں آگئے ہیں جو اشجار کیا کریں

سارے عیاں ہیں آنکھوں سے دل کے معاملے

چہرہ ہی بن گیا ہے یہ اخبار کیا کریں

قدموں پہ سر جھکا کے انھیں کیسے روک لوں

گرتی نہیں انا کی یہ دیوار کیا کریں

اپنی بنائی چھت ہی یہاں سر پہ آ گری

فوزی کہو نا قوم کے معمار کیا کریں