اعليٰ عدالت آسماں پر ہے

امة الباري ناصر   ہر اک معصوم کے خوں کي شکايت آسماں پر ہے جو بےدردوں کو خود روکے وہ طاقت آسماں پر ہے عدو تو بڑھ گئے ہيں حد سے اب ديدہ دليري ميں…

غزل

بشريٰ سحر کولکاتا   نہ چھو سکا کوئي جاں سوز حادثہ مجھ کو بچا رہي تھي مجھے، ماں! تري دعا مجھ کو ہزاروں چہرے نگاہوں ميں ميري آئے مگر نہ بهايا کوئي بھي چہرہ ترے…

اک پل ميں اُبھرتي ہيں سو رنگ ميں…

فہميدہ مسرت احمدجرمني   اک پل ميں اُبھرتي ہيں سو رنگ ميں ڈھلتي ہيں پرچھائياں يادوں کي منظر پہ تھرکتي ہيں بيتاب تمنائيں کب دل سے نکلتي ہيں زندانِ محبت ميں روتي ہيں سلگتي ہيں…

غزل

بشريٰ سحر کولکاتا   نہ چھو سکا کوئي جاں سوز حادثہ مجھ کو بچا رہي تھي مجھے، ماں! تري دعا مجھ کو ہزاروں چہرے نگاہوں ميں ميري آئے مگر نہ بهايا کوئي بھي چہرہ ترے…

اک پل ميں اُبھرتي ہيں سو رنگ ميں…

فہميدہ مسرت احمدجرمني   اک پل ميں اُبھرتي ہيں سو رنگ ميں ڈھلتي ہيں پرچھائياں يادوں کي منظر پہ تھرکتي ہيں بيتاب تمنائيں کب دل سے نکلتي ہيں زندانِ محبت ميں روتي ہيں سلگتي ہيں…

ہم خاک زاد

ڈاکٹرثمينه واحد ہم جو خاک زاد ہيں ہمارے روح ہر اس درد سے باغي ہيں جو ورثے ميں ملے ہيں ہم تو خاک زاد ہيں ہميں مذہب سے کيا لينا کہيں مسجود مسجد ميں کبھي…

بھُل بھليکھے پيار سي پايا

(فہميدہ مسرت احمد جرمني) بھُل بھليکھے پيار سي پايا ميں تے اپنا آپ گنوايا ہر کوئي مارے طعنے مہنے سجنا ايہہ کيہ وَير کمايا جيہڑے دنيا چھڈ کے ٹُر گئے اج تک مڑ کے کوئي…

مجھے اردو نہيں آتي

ميں ايسا گُل ہوں جس ميں سے کوئي خوشبو نہيں آتي ميں اردو کا معلم ہوں مجھے اردو نہيں آتي تلفظ بھول جاتا ہوں کئي لفظوں کا ميں اکثر قواعد کا کوئي بھي جز نہيں…

غزل

(بشارت سکھي جرمني) گرہ نفرت کي کيوں کھلتي نہيں ہے محبت کي کلي کھلتي نہيں ہے ہے جنگ افکار کي سن لے زمانہ کہ تجھ سے دشمني ذاتي نہيں ہے مري تشنہ لبي حد سے…

دادی امّاں

میری دادی امّاں نیاری بھولی بھالی پیاری پیاری اپنے ساتھ کھلاتی ہیں وہ میرا جی بہلاتی ہیں وہ راتوں میں کہتی ہیں قصّے پریوں کے بھالو راجا کے کوئی مجھ کو اگر رلائے پھر وہ…

استاد کى چھڑى

(بچے کى نظر مىں) ىہ کىا ہے مرى جاں کا آزار ہے مرى زندگى اس سے دشوار ہے سراسر مرے حق مىں ىہ زہر ہے بلا ہے مصىبت ہے ىا قہر ہے کرے کھىلنے کا…

راہ چاہ شکستہ اور زخم آبلہ پائي

(سعديہ تسنيم سحر) راہ چاہ شکستہ اور زخم آبلہ پائي کونسے نگر اتريں چاند کے تمنائي راکھ آرزووں کي شہر دل ميں اڑتي ہے ’’اور کيا دکھائے گي يہ طويل تنہائي‘‘ عکس تيرے چہرے کا…

سچائي کا سورج

امة الباري ناصر سچائي کا سورج نکلا ہے آنکھيں کھوليں ‘ديکھيں تو اک چشمہء صافي پھوٹا ہے پي ليں ذرا سا چکھيں تو ہم لوگوں کي خوش بختي ہے وقتِ مسيحا پايا ہے اب قرب…

دسمبر

(ندرت جہاں کاشف جرمني) دسمبر آ گيا پھر سے تمھيں معلوم ہے جاناں ؟ بہاريں جب گزرتي ہيں مرے خاموش آنگن سے بہت آنسو رلاتي ہيں ہوائيں جب گلستاں ميں مدھر سے گيت گاتي ہيں…

غزل

(بشارت سکھي جرمني ) کتنا دل کش ہے ترے پيار کا اظہار کہ بس روح تک ہوگئي ہے مري سرشار کہ بس زيست ہر لمحہ ہوئي جاتي ہے آزار کہ بس ہو رہے وقت کے…

اب کے دسمبر!

(نُزہت جہاں ناز، کراچي) برستي بارشيں باہر، جلے آتش اک اندر بھي عجب انداز سے لو آگيا اب کے دسمبر بھي اُداسي رُخ کرے ہر شام، دھيرے سے، پہاڑوں کا تو شاليں اوڑھ کے ہم…