//نعت پاک
urdu_shairy

نعت پاک

بشریٰ سحر کولکاتا

اے خدا سرورِ کونین کا روضہ دیکھوں

ہے تمنا مرے دل میں کہ مدینہ دیکھوں

چوم لوں چشم عقیدت سے در آقا کو

چشم آداب سے میں گنبدِ خضرا دیکھوں

جبکہ ہو پیش نظر میرے سنہری جالی

دیر تک کیوں نہ میں منظر وہ سہانا دیکھوں

بارش نور نہ کیوں میرے خیالوں میں ہو

جب تصور میں تجھے اے شہہ بطحا دیکھوں

خانہء کعبہ سے لوٹوں جو مدینے کو میں

ہے تمنا کہ وہاں فیض کا دریا دیکھوں

مدتوں سے یہ ہے ارمان مرے دل میں ’سحر‘

خواب ہی میں کسی شب صورتِ آقا دیکھوں