کنول

. تحریرمنیبہ گوہر ربوہ بہار کی آمد تھی۔ شاید قدرت اپنی تمام دل آویزیوں اور رعنائیوں کے ساتھ جلوہ آرا تھی۔ فدایان فطرت ، ہرے ہرے لہلہاتے ہوئے ، سر سبز شاداب میدانوں، پہاڑوں کے…

یہ دستور زبان بندی

. تحریرسلمیٰ قریشی-سرگودھا پاکستان ’’ زبان بند کرو لڑکی ...خاموش ہو جاؤ! پی جاؤ !! زہر ہے تب بھی...تمہاری آواز ان دیواروں سے باہر نہ جائے !!خبردار! خاندان کی ناموس پر کوئی آنچ نہ آئے…

لال ڈوپٹہ

. تحریررفعت اسلم-پاکستان وہ سانولی سلونی تیکھے نقوش والی جب ہنستی تو سفید دانت موتیوں کی طرح ایسے چمکتےکہ جیسے کہر زدہ رات میں چاند جھلک دکھانے اچانک سے نمو دار ہو جائے ،باتیں کرتی…

رشتوں کے بھرم اور پردے ہمارے

بچپن میں جب امی بھائی کو دہی یا نہاری وغیرہ لینے بھیجتی تھیں تو ساتھ اسٹیل کا چھوٹا ڈول دیا کرتی تھیں کہتی تھیں کہ ایک تو شاپنگ بیگ کے جراثیم نہیں لگتے دوسرا کھانے…

بہار

نہ پھول پتّے نہ ہم مسکرائے بارش میں

. تحریر بشریٰ عمر بامی-انگلینڈ ساون کی گھٹائیں امنڈ کر آتی تھیں ,شام کے سائے گہرے ہوتے جاتے تھے صحن میں بچھی چارپائیاں اور ان پر سفید چادریں  مجھے گرمیوں کے موسم میں بہت بھاتی…

بند کلیوں میں افسانے مت ڈھونڈو

. تحریر نغمانہ حسیب کھلنے دو کہ کہانی خوشبو کی طرح بکھر جائے گی۔ یہ 1998 کی بات ہے غالباً... جب باؤ صاحب کو ہماری ایک نظم پڑھ لینے کا اتفاق ہوا۔ باؤ صاحب کو…

دھاگے

. تحریر قدسیہ عالم-فرانس یہ ؟؟ ارے یہ آپ کو کہاں سے ملی ؟؟؟یہ تو میری  تصویر ہے ... ہے نہیں تھی... اب میری صورت ایسی نہیں ...میں نے اپنی صورت اپنی تصویر بدل ڈالی…

jokes_ghalib

مرزا غالب کے لطیفے(قسط سوم)

مرزا اور آم مرزا آموں سے کبھی سیر طبیعت نہ ہوتے تھے۔ اہل شہر تحفةً بھیجتے، مرزا خود بازار سے منگواتے، باہر سے دور دور کا آم بطور سوغات آتا تھا مگر مرزا کا جی…

Beautiful-River

یادوں کی بہتی ندیا

. بشریٰ عمر بامی انگلینڈ ندیا تیر ا نام بہت سہانا... تیراکام دلبرانہ... تیری چال مستانہ... تیرا شور عاشقانہ۔ ...تیرا پیار قاتلانہ... ندیا اور اس کا بہتے رہنا دونوں لازم وملزوم اور اسکا پل پل…

وہ کون تھی

. مومنہ ہالینڈ ایلس نے کمرے میں داخل ہوتے ہی گاڑی کی چابیاں میز پر پھینکیں اور اپنے آپ کو ایزی چیئر پر گرا لیا..۔ ہمیشہ متحمل مزاج اور منظم رہنے والی ایلس آج بہت…

muhabbat

صدائے محبت

. آصفہ بلال پاکستان میز پر بکھری فائلوں کو سمیٹتے ہوئے اس نے اپنی رسٹ واچ پر نظر ڈالی ...وہ روز تقریباً اسی وقت آفس بند کیا کرتا تھا...آج کوئی خاص کیس بھی نہیں تھا…

PEEDAN LELO.

پیڑاں لے لو پیڑاں

. مبشرہ ناز گلی سے آواز آ رہی تھی پِیڑاں لے لو پِیڑاں ... پِیڑاں ویچنا یہ کون تھا جو درد بیچ رہا تھا ، سکھ بکتے ہوتے تو جھولی بھر کر خرید لیتی ۔…