//اپنی قدر کیجئے

اپنی قدر کیجئے

. تحریر فوزیہ منصور

ہم خواتین بیٹی کے روپ میں ہوں یابہن کے، بہو کے روپ میں ہوں یا ماں کے، اہل خانہ کی خدمت اور خیال میں اپنا آپ یکسر فراموش کر دیتی ہیں۔ اب ایسا بھی نہیں کہ سب ہی ایسی ہوں۔ بہت سی بہنیں اپنے آپ پہ بھی بھرپور توجہ دیتی ہیں ۔ لیکن ہمارے معاشرے میں زیادہ تر گھرانوں میں خواتین گھر کے کاموں میں یہ بھول جاتی ہیں۔ کہ ان کاموں کو کرنے کے لئے ان کا صحت مند ہونا کتنا ضروری ہے۔

کچن کی ملکہ اگر ایک دن بھی بستر پہ پڑ جائے تو گھر کا نظام درہم برہم ہو جاتا ہے۔ماناگھر میں سب کا خیال رکھناعورت کی ذمہ داری ہے۔ یہ بھی سچ ہے عورت کا کام گھر سنبھالنا ہے۔اس کےساتھ ہونٹوں پہ مسکراہٹ کا ہونا بھی اضافی خوبی ہے لیکن خاتون خانہ صحت مند ہوں گی تو اپنے فرائض احسن رنگ میں سر انجام دے سکیں گی۔

ہماری عادت ہے ہر اچھی چیز خاوند یا بچوں کے لئے رکھ دیتے ہیں۔ کہیں کوئی کمی بیشی ہو تو اپنے حصے کو پیش کر دیتے ہیں۔ یہ رشتوں کی محبت ہے۔ احساس ہے، مگر خود کو کہیں گم کر دینا میرے خیال میں مناسب نہیں ۔ محبت اور احساس کے رشتوں میں اپنی ذات کی نفی کرتے رہنا کسی طرح بھی ٹھیک نہیں ۔

 اپنی صحت کا اسی طرح خیال رکھیئے جس طرح اپنے اہل خانہ کا خیال رکھتی ہیں ۔آپ صحت مند ہیں تو گھر کا نظام بہترین چلے گا ۔چھوٹی چھوٹی سی خوشیوں کو انجوائے کر سکیں گی۔ ۔آپ نے اپنے پیاروں کو لذیذ کھانوں میں محبت گھول کر پلانی ہے تو پہلے تھوڑی سی محبت خود سے بھی کیجیے۔

صحت انمول تحفہ ہے ۔ جو اپنی صحت کسی وجہ سے کھو چکے ہیں ۔ وہی اس کی قدر جانتے ہیں ۔ وہی بتا سکتے ہیں کہ اپنے ہاتھ پاؤں چلتے رہنا زندگی کی علامت ہے۔
زندگی میں نشیب و فراز آتے رہتے ہیں کبھی خوشیوں کی محفلیں زیادہ سجتی ہیں تو کبھی اشکوں کی ۔ کبھی زندگی حسین لگتی ہے تو کبھی بے رنگ ، جذبات کے یہ طوفانی ریلے زندگی کا حصہ ہیں ۔ آتے ہیں گزر جاتے ہیں ۔ وقت ہمیشہ ایک سا نہیں رہتا ۔ بدلتا رہتا ہے ۔ ہمیں اس وقت تک جینا ہے ۔ جب تک وہ سانسیں جو مقدر میں لکھی گئی ہیں وہ پوری نہ کر لیں ۔ ۔اس لئے جب تک زندہ ہیں۔ صحت مند بھر پور زندگی گزاریئے ۔ اپنوں کے ساتھ ،اپنوں کے لئے ۔ ۔ اپنی قدر کیجئے ۔