//پھول کچھ میں نے چنے ہیں انکے داماں کے لئے

پھول کچھ میں نے چنے ہیں انکے داماں کے لئے

ايک عرب ماں کي نصيحت ’’ بيٹي کے نام‘‘

زمانہ جاہليت کي ديہاتي عورت امامہ بنت الحارث نے اپني بيٹي ام ياس کو اس کي رخصتي کے موقع پر کہا کہ : ’’اے ميري بيٹي ، اگر کسي صاحب علم و فضل کو نصيحت کرنے کي ضرورت نہ سمجھي جاتي تو يقينا تيرے فضل و ادب کي بناء پر ميں ہر گز نصيحت نہ کرتي۔ليکن نصيحت کرنا عقلمند انسان کي ياد دہاني کا موجب ہوتا ہے۔اگر کسي دوشيزہ کے والدين کي خوشحالي اور ان کااپني بيٹي سے انتہائ پيار تقاضا کرتا کہ اسے شادي کرنے کي ضرورت نہيں تو سب سے بڑھ کر تجھے شادي کرنے کي حاجت نہ ہوتي ليکن عورتوں کو مردوں کے لئے اور مردوں کو عورتوں کے لئے پيدا کيا گيا ہے۔

اے ميري پياري بيٹي، تو اس ماحول سے جدا ہو رہي ہے جس ميں تو پيدا ہوئي اور جس گھونسلے ميں تو پروان چڑھي اسے پيچھے چھوڑ کر تو ايسے گھونسلے کي طرف جا رہي ہے جس سے تو نا آشنا ہے۔ايسے ساتھي کے پاس جا رہي ہے جس سے تو مانوس نہيں۔ وہ تيرا مالک بن کر تيرا نگران اور سرتاج بن گيا ہے۔تو اس کي لونڈي بن جانا وہ تيرا غلام بن جائے گا۔…تو ان دس نصيحتوں کو پلے باندھ لے۔

۱۔خاوند کا ہميشہ قناعت سے ساتھ دينا۔

۲۔خوش دلي سے اس کي بات سننا۔

۳۔اس کي نگاہوں کي پسنديدگي کا خيال رکھنا۔

۴۔اس کي نفرت و کراہت کے موقع پرجائزہ لينا کہ تيري کسي بد صورتي پر اس کي نگاہ نہ پڑے۔تيرے جسم سے پاکيزہ خوشبو ہميشہ سونگھے۔

۵۔اس کے کھانے کے اوقات کا خاص خيال رکھنا۔

۶۔اس کي نيند اور آرام کے دوران ماحول کا خاص خيال رکھنا کيونکہ بھوک کي گرمي انسان کو مشتعل اور نيند کا لطف خراب کرنا نا پسنديدگي کا موجب ہوتا ہے۔

۷۔اس کے گھر اور ماحول کي حفاظت کرنا۔

۸۔اس کي ذات، لواحقين اور اس کے بچوں کا خيال رکھنا۔ان پر پوري توجہ دينا کيونکہ مال کي حفاظت تيري ہي بہترين عزت افزائي ہے اور بچوں و لواحقين کي طرف توجہ تيرے حسن انتظام اور سليقہ شعاري کي دليل ہے۔

۹۔اس کا بھيد ہر گز فاش نہ کرنا۔ اس کي نافرماني نہ کرنا۔ اس لئے کہ راز فاش کرنے سے تو بے وفا سمجھي جائے گي اور نافرماني کرنے سے اس کے سينہ کو غصے سے بھر دے گي۔

۱۰۔ اگر تو اسے غمزدہ ديکھے تو اس کے سامنے خوشي کا اظہار نہ کرنا کيونکہ يہ تيري کوتاہي ہے۔ جب وہ خوش ہو تو اس کے سامنے افسردہ نہ ہو کہ اس کي خوشي کو بے لطف کر دے گي۔ تو جتنا اس سے اتفاق رائے اور مزاج سے موافقت کرے گي وہ اتنا ہي تيرا ساتھ دے گا۔تو اپني پسنديدہ خواہش کو تب ہي پائے گي جب تو اپني پسند اور ناپسند کواس پر چھوڑ دے گي۔

خدا تعاليٰ تمہارے لئے خيرو برکت مقدر کر دے۔آمين

يہ عظيم الشان نصائح ہر بچي کے لئے پاکيزہ اور حسين تر تحفہ ہيں۔ اگر ان کے مطابق اپنے کردار کو ڈھال لے تو زندگي بھر خوش بخت اورخوش و خرم رہے گي۔ انشاء اللہ تعاليٰ۔

{از الفضل انٹرنيشنل۔۳ جولائي تا ۹ جولائي ۱۹۹۸}