//شاعروں کی اقسام

شاعروں کی اقسام

تحریر فائزہ حبیب کراچی پاکستان

گو کہ شاعری خداداد صلاحیت ہے اور گزشتہ صدیوں نے عظیم شاعروں کو جنم دیا ہے۔

لیکن ان کے علاوہ بھی شاعروں کی مختلف قسمیں پائی جاتی ہیں۔

پہلی قسم ہے موسمی شاعر جو اکثر اوقات موسم سرما کی شروعات سے اختتام تک رونما رہتے ہیں اور اس کہ بعد سارا سال موسم سرما کا انتظار کرتے ہیں۔

دوسری قسم جذباتی اور رٹا ماسٹر شاعر ہوتی ہے جو اپنے جذبات کو دوسروں کے الفاظ میں تلاش کر کے تیسرے بندے کو بور کرتے ہیں۔ یہ لوگ تمام زندگی دوسروں کی شاعری پر تکیہ کئے بیٹھے رہتے ہیں یہی نہیں کسی دوسرے کی دولت (کلام) محفلوں میں یوں لٹاتے ہیں گویا باپ دادا کی جاگیر ہو۔ انکا حافظہ کمال ہوتا ہے یہ دوسروں کے کلام پر داد وصول کرنے کا ہنر خوب جانتے ہیں۔

تیسری قسم ہوتی ہے وہمی شاعر۔ کبھی کہیں بات کرتے کرتے ہم وزن الفاظ منہ سے نکل آے تو وہیں پکے ہو جاتے ہیں کہ ہم سے اچھا شاعر اس زمانے میں شاید ہی کوئی ہو۔ زیادہ نہیں دو چار بار محفلوں میں شدید شرمندگی کے بعد یہ وہم ختم ہو ہی جاتا ہے۔ اور پھر یہی لوگ کہتے نظر آتے ہیں شاعری جیسی فضول چیزکوئی نہیں ہے۔ انکو دیکھ کر ایسا لگتا ہے جیسے شاعری نے ان سے بے وفائی کی ہو۔

چوتھی قسم ہے ناکام عاشقوں کی۔ دکھی گانے، دکھی غزلیں، دکھی شاعری اور شدید دکھی شکل ان لوگوں کا کل اثاثہ ہوتا ہے۔ اگر یہ لوگ سفر میں ہو اور آپ شریک سفر ہو تو سارے رستے آپ اس وقت کو کوسیں گے جب آپ نے ان کے ساتھ سفر کا فیصلہ کیا تھا۔ یہی نہیں سفر کے اختتام پر یہ آپ کو ثابت کر چکے ہوں گے کہ ساری دنیا بے وفا، دغا باز اور فریبی ہے۔ اور آپ کو یہ بھی محسوس ہو گا کے دنیا میں بے وفائی کے علاوہ کسی موضوع پر شاعری کی ہی نہیں گئی۔

پانچویں قسم وہ ہوتی ہے جنکا دل اور دماغ شاعری سے بلکل خالی ہوتے ہیں لیکن انکی ڈائریاں اشعار اور غزلوں سے بھری ہوتی ہیں۔ اور ہر موسم کی شاعری اس میں میسر ہوتی ہے سردی گرمی خزاں بہار۔ سالگرہ، شادی بیاہ، نوحہ، یوم آزادی، یوم دفع۔ سب کچھ۔