//رحمتہ اللعالمین – طبقہء نسواں پر

رحمتہ اللعالمین – طبقہء نسواں پر

صفیہ چیمہ -فرینکفرٹ

محمد مصطفٰے صل علی کی آج محفل ہے

حبیب کبریا خیرالوریٰ کی آج محفل ہے

محمد تھے وجودِ رحمة للعالمیں لوگو

انہی کی رحمتوں کے ذکر کی آج محفل ہے

خلق کے اعلیٰ درجہ پر ہوئے فائز رسول اللہ

شریعت جس نے کامل کی انہی کی آج محفل ہے

جِسے گاڑے تھا باپو زندہ ہی خود کھود کے قبریں

بٹھایا جس نےچادر پر انہی کی آج محفل ہے

جہالت سے عرب میں جو خریدی بیچی جاتی تھی

بہشت قدموں تلے رکھ دی انہی کی آج محفل ہے

تجھے حقِ وراثت بھی دیا اور جینے کا حق بھی

میرے آقا تیرے احساں گنوں آج ایسی محفل ہے

یہ ہے فرمانِ ربی کہ پڑھو ہر دم درود اس پر

جو خاتم النبیں ٹھہرے انہی کی آج محفل ہے

یہ قسمت ہو صفی تیری ملے تجھ کو شفاعت بھی

شفیع المذنبیں آقا میرے کی آج محفل ہے