//خدا سے محبت

خدا سے محبت

صفيہ چيمہ فرينکفرٹ

خدا سے محبت کا ہے يہ قرينہ

خدا سے محبت کا پہلا يہ زينہ

ايمان و يقيں اس کي وحدانيت کا

سبق ہے يہ پہلا انسانيت کا

وہ ہے ايک اس کا نہيں کوئي ہمسر

بنانا شريک  ہے گناہ سب سے بڑھ کر

پيدا کيا جس نے سب  بحر و بر کو

لگايا عبادت ميں جن و بشر کو

عبادت کے لائق  محض ذات اس کي

محبت کے لائق صرف ذات اس کي

حکومت اسي کي ، ولايت اسي کي

قرآن اس کا ، ہدايت اسي کي

حقوق خدا ہيں حقوق العباد

پورے کرو گے تو دل ہونگے شاد

يہي ہے عبادت يہي خُلق ِانساں

کہ کام آئيں دنيا ميں انساں کے انساں

ہے فرمانِ ربّي ہو الفت سبھي سے

محبت ہو سب سے نہ نفرت کسي سے

ہے يہ زندگي ايک نعمت خدا کي

کرو شکر اس کا  ہے جس نے عطا کي

خدا کي رضا ميں جو راضي رہو گے

صفي فيض تا ابد پاتے رہو گے