//اعليٰ عدالت آسماں پر ہے

اعليٰ عدالت آسماں پر ہے

امة الباري ناصر

 

ہر اک معصوم کے خوں کي شکايت آسماں پر ہے

جو بےدردوں کو خود روکے وہ طاقت آسماں پر ہے

عدو تو بڑھ گئے ہيں حد سے اب ديدہ دليري ميں

نہ جانے اور کتني اب رعايت آسماں پر ہے

يہ پودا احمديت کا خدا نے خود لگايا ہے

زميں پر ہے مگر اس کي حفاظت آسماں پر ہے

خدا پھيلا ئے گا اس کو زميں کے سب کناروں تک

جو دين ِ حق کي کرتا ہے اشاعت آسماں پر ہے

اسي نے دور کرکے خوف ديں کو تمکنت بخشي

چلانے والا احمدؐ کي خلافت آسماں پر ہے

ہزاروں ظلم سہہ کر احمدي خاموش رہتے ہيں

انہيں يہ علم ہے اعليٰ عدالت آسماں پر ہے

ہر اک ظالم کو اس نے آہني ہاتھوں سے کچلا ہے

جہاں انصاف ہوتا ہے عدالت آسماں پر ہے

کسي انسان کے آگے نہيں فرياد اور زاري

ہماري زندگي کي ہر ضمانت آسماں پر ہے