//اردو ہماری قومی زبان ہے
urdu

اردو ہماری قومی زبان ہے

. تحریر حسن بانو رخشانی

وہ کرے بات تو ہر لفظ سے خوشبو آئے

 ایسی بولی وہی بولے جسے اردو آئے

 جیسے کہ آپ سب جانتے ہیں کہ اُردو ہماری قومی زبان ہے ہماری ثقافت ہےمگر افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہم نے اپنی ہی زبان کو اپاہج بنایا ہوا ہے آپ میرا اشارہ سمجھ سکتے ہیں  کہ میں کیا کہنا چاہتی ہوں

مطلب واضح ہے کہ آج  ہم نے اپنی قومی زبان کو فوقیت دینا چھوڑ دیا ہے،  آج ہم نے ان زبانوں کا دامن تھام لیا ہے جو ہماری زبان ہی نہیں  ہمارا سرمایا ہی نہیں، آخر یہ ظلم اُردو کے ساتھ کیوں  یقیناً ہم اس کی حق تلفی کر رہے ہیں،  ہم اپنی زبان کا حق کھا رہے ہیں،ہمیں اپنی  ہی زبان کو فروغ دینا چاہیے۔

آج جتنے بھی ترقی پذیر ممالک ہیں انہوں نے اپنی ہی زبان کو فوقیت دی آپ چین  میں جائیں انہوں نے  اپنی ہی زبان کو فوقیت دی یہی وجہ ہے کہ آج  وہ ترقی کی طرف گامزن ہیں، اسی طرح روس، فرانس ، ایران، سعودیہ  سب اپنی ہی زبان کو فروغ دیتے ہیں، میرے جی کو  بہت تکلیف پہنچی ہے۔

جب ہم رومن اردو لکھتے ہیں ۔ جب ہم  انگریزی الفاظ کو اردو رسم الخط میں لکھتے ہیں۔ جب ہم اپنی گفتگو میں دوسری زبان کی ملاوٹ کرتے ہیں۔جب ہم انگریزی میں اس ملک کا حلف لے رہے ہوتے ہیں ۔جب ہم فیصلے انگریزی میں لکھ رہے ہوتے ہیں ۔جب ہم اپنے معصوم بچوں کو انگریزی کے نام پر تعلیمی  اداروں میں داخل کرواتے ہیں ۔

میں اپ تمام احباب سے درخواست کنندہ ہوں کہ

سوشل میڈیا پر اردو رسم الخط کو فروغ و ترجیح دیجئے کیونکہ اب یہ زبان  واحد ذریعہ  ہے ملت کو جوڑنے کا۔

اس کے رسم الخط کی حفاظت بھی ہماری ہی ذمہ داری ہے۔ لکھنے میں املا یا تذکیر و تانیث کی غلطی کی فکر نہ  کریں بس لکھتے رہیں۔ اس عمل سے یہ فائدہ ہوگا کہ گوگل حروف کی شناخت کر لے گا اور آہستہ آہستہ آٹو کریکشن کے وہ وسائل حاصل ہوجائیں گے جو انگریزی اور دوسری زبانوں کو حاصل ہیں۔

 *اپنی اردو دوستی کا ثبوت دیجئے اور جو کچھ لکھنا چاہتے ہیں وہ  صرف اردو میں لکھیں۔ یہ عمل بھی اردو کی ایک خدمت شمار کیا جائے گا۔

*ملاحظہ: چونکہ آپکو اردو کی بورڈ استعمال کرنے کی عادت نہیں ہے اس لئے شروع میں مشکلات پیش آئیں گی لیکن دو تین دن میں ہی اسکی عادت پڑجائے گی تو انشاء اللہ آپ رومن (انگریزی) رسم الخط سے بھی زیادہ تیز اردو کی بورڈ سے لکھنے لگیں گے یہ میرا ذاتی تجربہ ہے

*آخر میں امید ہے کہ جملہ احباب و محبین میری اس درخواست کو قابل اعتناء سمجھتے ہوئے عمل پیرا ہوں گے۔ جزاک اللہ خیرا کثیرا

کبھی عشقِ خدا، کبھی عشقِ صنم. نہ خدا ہی مِلا ۔ نہ وِصال صَنَم … نہ پِلاؤ گے شربتِ وَصل ۔ تو ہم. نہ اِدھر کے رہے نہ اُدھر کے رہے۔